+92-333-5029585 | +92333-7171203 info@triptrails.com.pk

Login

Sign Up

After creating an account, you'll be able to track your payment status, track the confirmation and you can also rate the tour after you finished the tour.
Username*
Password*
Confirm Password*
First Name*
Last Name*
Email*
Phone*
Country*
* Creating an account means you're okay with our Terms of Service and Privacy Statement.

Already a member?

Login
+92-333-5029585 | +92333-7171203 info@triptrails.com.pk

Login

Sign Up

After creating an account, you'll be able to track your payment status, track the confirmation and you can also rate the tour after you finished the tour.
Username*
Password*
Confirm Password*
First Name*
Last Name*
Email*
Phone*
Country*
* Creating an account means you're okay with our Terms of Service and Privacy Statement.

Already a member?

Login

وادی سوات کی خوبصورت جھیلیں

وادی سوات کی خوبصورتی کو چارچاند لگانے کے لئے وادی میں 52 ایسی جھیلیں بھی ہیں۔ جسکو ابھی تک بہت کم لوگو ں نے ایکسپلور کیا ہوگا ۔۔ یہ جھیلیں خوبصورتی میں اپنی مثال آپ ہیں ۔۔ سوا ت کے آرمی آپریشن کے بعد ایک دفعہ پھر سیاحوں کی دسترس میں وادی کا کونہ کونہ آگیا ہیں ۔۔ سیاحوں کے لئے جہاں اس وادی کے مشہور سیاحتی مقامات مالم جبہ ، میاندم ، بحرین اور کالام میں آنکھوں کی ٹھنڈک مو جود ہیں وہاں وہاں اس خوبصورت وادی کے باون جھیلو ں میں بھی دل کا سکون اور اللہ کی کبریائی مو جود ہیں ۔ ان جھیلوں میں زیادہ قابل دید اور قابل رسائی جھیلیں جو اپنے پیچھے ایک داستان‘ ایک پوری تہذیب اور مذہبی تقدس رکھتی ہیں، ان خوشنما جھیلوں میں مہوڈنڈ جھیل کنڈول جھیل‘ سپین خوڑ جھیل‘ خاپیرو جھیل‘ اسمس جھیل‘ نیل سر جھیل‘ گودر جھیل ،سیدگئ جھیل درال جھیل ، شیطان گڈ جھیل ،، اندرب جھیل ، بشی گرام جھیل‘ زیادہ مشہور ہیں اور جس سے پریوں ‘ جنوں اور دیوئوں کے بہت سے افسانے اور داستانیں وابستہ ہیں۔ ان جھیلوں کے کنارے کیمپنگ‘ کی جاسکتی ہے‘ اور ان کے کناروں پر ٹھہرنے یا پارٹیاں کرنے اور بہترین وقت گزارنے کے بہت سے مقامات ہیں۔ سوات کی وادی کچھ منفرد سی وادی ہے جس کے چاروں طرف بلند وبالا پہاڑ ہیں‘ جس میں جگہ جگہ دوسرے علاقوں میں جانے کے لیے راستے اور درے واقع ہیں۔ ان پہاڑوں کے درمیان میں سوات کی وادی ایک کنول کی طرح کھلی وادی ہے جس کو اس کے بسیار پانی نے زندگی‘ طراوت اور معاشی خوشحالی دی ہے۔

Leave a Reply